ہری مرچ آنکھوں،جلد،نظام ہاظمہ اورکولیسٹرول کوکنٹرول کرنےمیں مددگار

ہری مرچیں اگرچہ تقریبا تمام گھرانوں میں بننے والے کھانوں میں استعمال ہوتی ہیں، تاہم بعض لوگ انہیں سلاد میں بھی استعمال کرکے کھاتے ہیں، کیوں کہ انہیں ان کے فوائد کا علم ہوتا ہے۔ہری مرچیں جہاں وزن کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں، وہیں یہ جلد اور نظام ہاضمہ کے لیے بھی فائدہ مند ہوتی ہیں اور ان میں شامل وٹامنز کئی طرح کی بیماریوں اور مسائل سے بھی بچاتے ہیں۔ایک بڑے سائز کی ہری مرچ میں 11 فیصد وٹامن اے، 182 فیصد وٹامن سی اور تین فیصد آئرن کے اجزا شامل ہوتے ہیں جو کہ صحت بہتر بنانے کے لیے کافی ہیں۔مذکورہ تینوں وٹائمز آنکھوں، جلد، نظام ہاظمہ اور کولیسٹرول کو کنٹرول کرنے میں مددگار ہوتی ہیں اور یہ توانائی دینے سمیت جسم میں موجود براؤن ٹشوز کو ختم کرنے میں مدد دیتے ہیں جو کہ موٹاپے کا سبب بنتے ہیں۔ مختلف تحقیقات سے یہ بات بھی ثابت ہوئی کہ ہفتے میں چار بار ہری مرچیں کھانے والے افراد میں دل کے امراض کے امکانات بھی کم ہوجاتے ہیں جب کہ اس سے بعض کینسر کی اقسام کی شرح بھی کم ہوجاتی ہے۔ ہری مرچوں میں شامل قدرتی اجزا موٹابولزم کو مضبوط بنانے سمیت جسم کو ہری مرچ میں بہت زبردست اینٹی ایجنگ خصوصیات بھی پائی جاتی ہیں جو آپ کو لمبے عرصے تک جوان رکھ سکتی ہیں، جو ہری مرچ کا باقاعدہ استعمال کرتے ہیں لمبے عرصے تک ان کے چہرے پرجھریاں نظر نہیں آتیں، خشک سکن کے لیے ہری مرچ کو سلاد میں شامل کرکے کھائیں۔ہری مرچ کا استعمال آنکھوں کے لیے بہت بہترین ہے کیونکہ اس میں بیٹ کیروٹین پایا جاتا ہے جو کہ آنکھوں کےلیے بہت مفید ہے، آنکھیں مختلف قسم کے انفیکشنز سے محفوظ رہتی ہیں۔ہری مرچ کا استعمال ہاضمے کے نظام کے لیے انتہائی مفید ہے جس کھانے میں ہری مرچ شامل ہو وہ کھانا ہضم آور ہو جاتا ہے۔کھانے کے ساتھ ہری مرچ کے استعمال سے گیس کے مسئلے سے نجات ملتی ہے، بھوک نہ لگنے کی صورت میں سلاد میں ہری مرچوں کا استعمال کرنا بے حد مفید ہے، اس کے علاوہ جس سالن میں ہری ہرچ کا ستعمال کیا جائے وہ بھی بھوک بڑھانے میں مدد دیتا ہے لیکن ہری مرچ کا سالن میں استعمال اس وقت کرنا چاہئے جب سالن پک جائے اور دم دینا ہو: مثلاً سالن پکنے کے پانچ منٹ پہلے اس طرح اس کے وٹامنز اور منرلز ضائع نہیں ہوتے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں