کرناٹک:حجاب پرپابندی کےخلاف احتجاج کرنےوالی58 طالبات کالج سےمعطل

حجاب پر پابندی کیخلاف احتجاج کرنے والی کالج طالبات کو معطل کردیا گیا، طالبات کا کہنا ہے کہ وہ جان دے دیں گی مگر حجاب نہیں چھوڑیں گی۔اس حوالے سے بھارتی ریاست کرناٹک میں ایک کالج کی انتظامیہ نے حجاب پر پابندی کے خلاف احتجاج کرنے والی 58طالبات کو معطل کردیا۔ معطلی ختم ہونے تک طالبات کا کالج کی حدود میں داخلہ بھی بند کردیا گیا ہے۔رپورٹ کے مطابق یہ تمام 58 طالبات شیرالاکوپا کے گورنمنٹ پری یونیورسٹی کالج میں زیر تعلیم ہیں۔ مشتعل طالبات کی کالج عہدیداران کے ساتھ بحث ہوئی، جس کے بعد پولیس نے انہیں منتشر کرنے کے لئے مداخلت کی۔بھارتی میڈیا کے مطابق پرنسپل کا کہنا تھا کہ کالج انتظامیہ نے حجاب پہن کر کلاسوں میں جانے کی ضد کرنے والی طالبات کو عدالت عالیہ کے عبوری حکم کے بارے میں سمجھانے کی کوشش کی تاہم انہوں نے ایک نہیں سنی اور حجاب پہننے پر بضد رہیں لہٰذا انہیں عارضی طور پر کالج سے معطل کر دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ حجاب کیلئے احتجاج کرنے پر دیگر مظاہرین کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جس میں جمعرات کے روز لوگوں پر مقدمات درج کیے گئے، ان لوگوں نے حجاب پر پابندی لگانے پر کالج انتظامیہ کے خلاف احتجاج کیا تھا۔بھارتی حکومت کی جانب سے اسکول و کالج کی طالبات پر حجاب کی پابندی کیخلاف مختلف شہروں میں بڑے پیمانے پرمظاہروں اور احتجاج کا سلسلہ تاحال جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں