پوپ فرانسس میوزک شاپ میں سی ڈیزکی خریداری کرتے ہوئےپکڑے گئے

پوپ فرانسس منگل کے روز ویٹی کن میں خفیہ طور پر ایک میوزک شاپ میں گئے تاہم جب وہ باہر آئے تو مقامی صحافی جیویر ماٹینز اتقاق سے وسطی روم کے علاقے میں موجود تھے ،انہوں نے موبائل سے پوپ کی ویڈیو بناکر ٹوئٹر پر پوسٹ کردی۔تاہم 85 سالہ فرانسس نے صحافی کو ایک خط لکھا جس میں انہوں نے اسے اس کے کام پر مبارکباد دی اور اپنی بدقسمتی پر افسوس کا اظہار کیا۔ فرانسس نے خط میں لکھا کہ ‘آپ اس سے انکار نہیں کر سکتے کہ یہ میری بدقسمتی تھی کہ تمام احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کے باوجود ٹیکسی رینک کے پاس ایک صحافی موجود تھا جس نے مجھے دیکھ لیا’۔ انہوں نے صحافی کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ آپ کے کام کا شکریہ جس نے مجھے مشکل میں ڈال دیا لیکن پتہ ہے میں سب سے زیادہ جس چیز کی کمی محسوس کرتا ہوں وہ یہ ہے کہ جب سے میں پوپ بنا میں سڑکوں پر عام آدمی کی طرح نہیں گھوم سکتا جیسا کہ میں پہلےگھومتا تھا۔ فرانسس منگل کے روز ایک سادہ سفید لباس میں ویٹی کن میں قائم اسٹیریو ساؤنڈ کی دکان پر گئے جہاں وہ 15 منٹ تک رہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق میوزک شاپ کے مالک کا کہنا ہے کہ وہ اور پوپ اس زمانے سے دوست ہیں جب وہ بیلجیئم میں ہوا کرتے تھے اور وہ اس وقت پوپ فرانسس نہیں تھے۔شاپ کے مالک نے مزید بتایا کہ پوپ کلاسیکی موسیقی کے ریکارڈ اور سی ڈی خریدنے کے لیے ان کی دکان پر آتے تھے اور منگل کے روز بھی انہوں نے پوپ کو کلاسیکی موسیقی کی کافی سی ڈیز دیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں