پاکستان میں بون میروٹرانسپلانٹ شروع کرنےوالےڈاکٹرطاہر شمسی انتقال کرگئے

خون کی بیماریوں کے ماہر اور پاکستان میں بون میرو ٹرانسپلانٹ شروع کرنے والے ڈاکٹر طاہر شمسی کراچی میں انتقال کر گئے ڈاکٹر طاہر شمسی برین ہیمریج کے باعث آغا خان اسپتال میں زیر علاج تھے۔انہیں 16 دسمبر کے روز اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں رات گئے ان کا آپریشن کیا گیا، ڈاکٹرز نے ان کی حالت تشویش ناک بتائی تھی۔ڈاکٹر طاہر شمسی نے کرونا کی پہلی شدید لہر کے دوران پلازمہ سے علاج کا طریقہ دریافت کیا تھا۔ڈاکٹر طاہر شمسی 26 برس قبل پاکستان میں بون میرو شروع کرنے کے لیے امریکا سے وطن واپس آئے، انہوں نے 88-1987 میں ڈاؤ میڈیکل کالج سے گریجویٹ کیا۔انہوں نے 2011 میں خون کی بیماریوں کے علاج کے لیے قومی ادارہ برائے امراض خون کے نام سے ادارہ قائم کیا، جس کے وہ سربراہ بھی رہے، این آئی بی ڈی میں اسٹیم سیل پروگرام کے ڈائریکٹر اور برطانوی رائل کالج آف پیتھالوجسٹ کے فیلو بھی تھے۔ڈاکٹر طاہر شمسی نے 1995 میں پہلی مرتبہ پاکستان میں بون میرو ٹرانسپلانٹ متعارف کروایا تھا اور لیاری کے نوجوان کا آپریشن کیا تھا، وہ اب تک ساڑھے چھ سو کے لگ بھگ بون میرو ٹرانسپلانٹ کر چکے ہیں، ان کے بین الاقوامی سطح پر 100 تحقیقی مقالے بھی شائع ہوچکے ہیں۔علاوہ ازیں، پنجاب میں بون میرو ٹرانسپلانٹ اور ڈاکٹروں کو تربیت دینے کے لیے صوبائی حکومت ڈاکٹر طاہر شمسی کی خدمات حاصل کرچکی ہے۔وہ ملک بھر میں بون میرو ٹرانسپلانٹ کی اب تک کئی افراد کو تربیت بھی دے چکے ہیں، جو نہ صرف ملک کے دوسروں صوبوں بلکہ غیر ملکی سطح پر اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ڈاکٹر طاہر شمسی کی جانب سے تحریر کیے گئے سیکڑوں تحقیقاتی مقالے بین الاقوامی جرائد میں شائع ہوچکے ہیں، کرونا وائرس کی پہلی لہر کے دوران انہوں نے کرونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے پلازمہ سے علاج کا طریقہ دریافت کیا۔ ڈاکٹر طاہر شمسی کو 2016 میں امریکا میں لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے نوازا گیا، امریکا میں ڈاکٹروں کی غیر سرکاری تنظیم ڈاؤ گریجویٹ ایسوسی ایشن آف نارتھ امریکا نے ڈاکٹر طاہر شمسی کی خدمات کے اعتراف میں انہیں لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ سے نوازا تھا۔اس کے علاوہ ڈاکٹر طاہر شمسی کو ان کی خدمات کے اعتراف میں ملکی اور عالمی سطح پر کئی اعزازات سے نوازا جا چکا ہے۔ڈاکٹر طاہر شمسی کا شمار ان ہیماٹولوجسٹ میں ہوتا ہے جن کی خدمات کی دنیا معترف ہے، سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی طبیعت بگڑنے پر بھی ڈاکٹر طاہر شمسی کی خدمات حاصل کی گئی تھیں

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں