نیند کےدورانیےمیں کمی قلبی امراض کاسبب بن سکتی ہے، تحقیق

نیند میں کمی کسی بھی شخص کے مدافعتی خلیوں کو متاثر کرسکتی ہے اور جسم میں سوزش کا سبب بن سکتی ہے۔جرنل آف ایکسپیریمنٹل سائنسز میں شائع ہونے والی نیویارک کے آئیکان اسکول آف میڈیسن میں کی جانے والی ایک نئی تحقیق کے مطابق جسم کے اندر موجود ان نظاموں کی نشان دہی سے شروع ہوتی ہے جو نیند اور مدافعتی صحت کے درمیان طویل مدت تک تعلق قائم رکھتے آئیکان اسکول میں میڈیسن کے اسسٹنٹ پروفیسر اور تحقیق کے شریک محقق کیمرون مک ایلپائن نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ سوزش میں اضافہ آپ کو متعدد مسائل کا ہدف بناتا ہے بالخصوص قلبی امراض کا۔ تحقیق کے سربراہ مصنف اور آئیکان اسکول میں کارڈیوویسکیولر ریسرچ انسٹیٹیوٹ کے ڈائریکٹر فلپ سورسکی کا نیوز ریلیز میں کہنا تھا کہ یہ تحقیق اس بات کی اہمیت پر زور دیتی ہے کہ بڑی عمر کے افراد کو روزانہ سات سے آٹھ گھنٹوں کی نیند لینی چاہیئے تاکہ سوزش اور بیماریوں سے بچنے میں مدد مل سکے، بالخصوص ان لوگوں کوجو دائمی امراض میں مبتلا ہیں۔ تحقیق میں بتایا گیا کہ انسانوں اور چوہوں میں مختل نیند ان کے خلیوں کے نظام اور مدافعتی نظام کی پیداوار کی شرح کو متاثر کر سکتی ہے۔ اس کے نتیجے میں مدافعتی خلیے بیماریوں کے خلاف حفاظت کرنے میں اپنی تاثیر کھودیتے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں