لاپتہ افراد کی بازیابی میں پیشرفت نہ ہونےپرسندھ ہائیکورٹ شدید برہم

سندھ ہائیکورٹ نے لاپتہ افراد کی بازیابی میں پیشرفت نہ ہونے پر شدید برہمی کا اظہار کیا ہے – سندھ ہائیکورٹ میں 10 لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے لاپتہ افرادکی بازیابی کے لیے قابل ذکر پیش رفت نہ ہونے پر شدید برہمی کا اظہار کیا۔عدالت نے تفتیشی افسر تھانہ اجمیر نگری کو شوکاز جاری کردیا اور لاپتہ شہری بلال سے متعلق ایس ایس پی سینٹرل سے رپورٹ طلب کرلی۔عدالت نے پولیس، رینجرز اور دیگر کو لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق اقدامات تیز کرنے کی ہدایت کی۔عدالت نے عالم، سدیس، شیر محمد اور قیوم خان کی بازیابی سے متعلق رپورٹ طلب کرتے ہوئے کہا کہ شہری بابر، ایاز، بلال اور عطا اللہ کو بازیاب کرایا جائے۔عدالت نے صوبائی اور وفاقی حکومت سے 6 ہفتوں میں رپورٹ طلب کرلی۔اس دوران پولیس نے بازیاب شہریوں کی واپسی سے متعلق رپورٹ عدالت میں جمع کرادی جب کہ عدالت نے دو گمشدہ شہریوں کی گھر واپسی کے بعد درخواستیں نمٹادیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں