لانگ مارچ: شہرکی حفاظت کیلئےفورسزکواسلحہ رکھنےکی اجازت ہونی چاہیے،رانا ثنا اللہ

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ کوئی اس (عمران خان) سے پوچھے کہ کیا تین چار ہزار لوگ عوام کا سمندر ہوتا ہے؟ جہاں کامونکی میں اس کا جلسہ گزرا وہاں چھوٹا سا حادثہ ہو جائے تو دو ہزار لوگ جمع ہوجاتے ہیں جبکہ یہ فتنہ کہہ رہا ہے کہ لوگوں کا سمندر ساتھ ہے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر داخلہ رانا ثنااللہ نے کہا کہ عمران خان کا مارچ دراصل فتنہ اور فساد ہے، جسے لاہور نے مقامی سطح پرمکمل طور پر مسترد کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اتحادی حکومت اور وزیر اعظم سے گزارش ہے کہ اگر آزادی مارچ نے اس طرح مسلح ہوکر آنا ہے تو وہ فورسز جو اس جتھے کو روکنے کے لیے صرف آنسو گیس اور ربڑ کی گولیوں سے لیس ہوگی، ان کو اپنے شہر اور ریاست کی حفاظت کے لیے اسلحہ رکھنے کی اجازت ہونی چاہیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں