فوادچوہدری اورشہبازگل کےخلاف کاروائی نہیں کی جائے،اسلام آبادہائیکورٹ کاپولیس کوحکم

تحریک انصاف کے رہنماؤں کے خلاف توہین مذہب کے مقدمات چیلنج کرنے کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے پولیس کو فواد چوہدری کے خلاف کوئی کارروائی کرنے اور شہباز گل کو وطن واپسی پر گرفتار کرنے سے روک دیا۔پیر کو تحریک انصاف کے رہنماء فواد چوہدری کی جانب سے تحریک انصاف لیگل ٹیم کے ایڈووکیٹ فیصل فرید اور ایڈووکیٹ علی بخاری کے ذریعے اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی گئی۔درخواست کی وصولی کی تصدیق اسسٹنٹ رجسٹرار ہائی کورٹ اسد خان کی جانب سے کی گئی، درخواست کی سماعت چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ اطہر من اللہ نے کی۔درخواست گزار کی جانب سے فیصل چوہدری ہائیکورٹ میں پیش ہوئے۔ وکیل نے وزیر داخلہ کی نیوز کانفرنس اور مریم نواز کے بیانات پڑھ کر سنائے۔ فیصل چوہدری نے بتایا کہ یہ واقعہ مدینہ منورہ میں ہوا اور پاکستان میں مقدمات درج کرلئے گئے، ہم چاہتے ہیں کہ تمام مقدمات کی فہرست عدالت کے سامنے رکھی جائے۔وکیل کا کہنا تھا کہ فواد چوہدری رکنیت سے مستعفی ہوچکے ہیں مگر انہیں ڈی نوٹیفائی نہیں کیا گیا، ڈی نوٹی فکیشن تک رکن اسمبلی اسپیکر کی اجازت کے بغیر گرفتار نہیں ہوسکتا۔عدالت نے پولیس کو فواد چوہدری کے خلاف 9 مئی تک کارروائی سے روک دیا۔ عدالت نے فواد چوہدری کو ہراساں کرنے سے بھی روک دیا اور فریقین کو نوٹس جاری کردیئے۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ سیکریٹری داخلہ یقینی بنائیں کہ فواد چوہدری کو ہراساں نہ کیا جائے اور آئندہ سماعت تک ان کے خلاف کوئی کارروائی بھی نہ کی جائے، عدالتی احکامات کی نقل سیکریٹری قومی اسمبلی کو بھی بھجوانے کی ہدایت کردی۔ درخواست میں فواد چوہدری کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ مجھے اور مقدمات میں نامزد ساتھیوں کو غیرقانونی ہراساں کرنے سے روکا جائے۔ درخواست کا متن ہے کہ ملک بھر میں درج مقدمات کو ریکارڈ پر لانے کی ہدایت کی جائے اور پٹیشنرز اور ان کے ساتھیوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی سے روکا جائے۔ عدالت سے استدعا کی گئی کہ مقدمات کی بنیاد سے متعلق وجوہات سے بھی آگاہ کیا جائے جبکہ ایف آئی اے یا پولیس کا کوئی بھی ایکشن غیر قانونی قرار دے کر کالعدم قرار دیا جائے۔ تحریک انصاف کے رہنماء شہباز گل کی جانب سے بھی حفاظتی ضمانت کی درخواست دائر کی گئی۔ وکیل فیصل چوہدری نے بتایا کہ جس دن یہ واقعہ ہوا شہباز گل امریکا میں تھے تاہم ان کے خلاف فیصل آباد سمیت دیگر شہروں میں مقدمات درج کئے گئے۔ تحریک انصاف کے وکیل فیصل چوہدری نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ شہباز گل امریکا میں ہیں تاہم خدشہ ہے کہ ان کو وطن واپسی پر گرفتار کرلیا جائے گا۔ فیصل چوہدری نے بتایا کہ ایک ہی واقعے کی متعدد ایف آئی آر کاٹی گئی ہیں اور پاکستان کے قوانین کے مطابق ایسا نہیں ہوسکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سیاسی پوائنٹ اسکور برابر کرنے کیلئے ایسا کیا جارہا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں