طب کا نوبیل انعام انسانی ارتقا کاطریقہ کارکو دریافت کرنے والے سائنسدان کےنام

سویڈن کی اسمبلی آف کیرولنسکا انسٹی ٹیوٹ نے طب کا 2022 کا نوبیل انعام اپنے ہی ملک کے سائنسدان سوانتے پابو کو دینے کا اعلان کیا ہے۔نوبیل کمیٹی ہر سال انعامات جیتنے والے افراد کے ناموں کا اعلان اکتوبر کے پہلے ہفتے میں شروع کرتی ہے۔کمیٹی مجموعی طور پر 6 کیٹیگریز ’طب، معاشیات، کیمسٹری، فزکس، ادب اور امن‘ کے نوبیل انعامات دیتی ہے۔ اس سال نوبیل انعامات جیتنے والے افراد کے ناموں کے اعلانات کا سلسلہ 3 اکتوبر کو شروع کیا گیا اور سب سے پہلے طب کے نوبیل انعام جیتنے والے خوش نصیب کا اعلان کیا گیا ہے۔وبیل کمیٹی کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ طب کا انعام سویڈن کے سائنسدان سوانتے پابو کو دیا گیا، جنہوں نے زمانہ قدیم کے انسانوں سے متعلق معلومات حاصل کرنے کا جدید طریقہ جسے ڈی این اے بھی کہا جاتا ہے، وہ دریافت کیا۔سوانتے پابو نے انسانی ارتقا اور جینز کو سمجھنے اور پڑھنے کا طریقہ دریافت کیا تھا۔انہوں نے ہزاروں سال پرانی ہڈی کے جینوم یا ڈی این اے کو سمجھنے کا جدید اور آسان طریقہ دریافت کیا، جس سے 40 ہزار سال پرانے انسان سے متعلق معلومات حاصل کرنا ممکن ہوا۔ سوانتے پابو نے 40 ہزار سال قبل یورپ اور وسطی ایشیا میں پائے جانے والے انسانوں ’نینڈر تھلز‘ جن کی ساخت بندروں سے زیادہ ملتی جلتی تھی، ان کے ارتقا کو سمجھنے کا طریقہ دریافت کیا، یوں ان کے طریقے سے جدید دور کے انسانوں جنہیں سائنسی طور پرہوموسیپین کہا جاتا ہے اور پرانے دور کے انسانوں میں مماثلت کی تحقیقات کا بھی راستہ کھلا۔ نوبیل کمیٹی نے اپنی ٹوئٹ میں بتایا کہ سوانتے پابو کو نوبیل انعام جیتنے کی خوشخبری صبح کو اس وقت دی گئی جب وہ کافی پی رہے تھے اور وہ خبر سن کر ششدر رہ گئے اور انہوں نے سب سے پہلے اپنی اہلیہ کے ساتھ خبر شیئر کی۔سوانتے پابو کو رواں برس دسمبر کے پہلے ہفتے میں نوبیل انعام کی رقم اور ایوارڈ اسٹاک ہوم میں دیا جائے گا۔نوبیل کمیٹی دوسرے نوبیل انعام کا اعلان 4 اکتوبر، تیسرے کا 5 اکتوبر جب کہ چوتھے انعام کا اعلان 6 اکتوبر کو کرے گی۔کمیٹی نوبیل انعام کا اعلان 7 اکتوبر جب کہ معیشت کے نوبیل انعام کا اعلان آخر میں 10 اکتوبر کو کرے گی۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں