سینیٹرسیف اللہ نیازی اورحامدزمان ایف آئی اے کی حراست میں

پی ٹی آئی رہنماؤں سینیٹر سیف اللہ نیازی اور حامد زمان کو پوچھ گچھ کے لیے حراست میں لیا گیا ہے۔وفاقی وزیر داخلہ نے پی ٹی آئی کے چیف آرگنائزر سینیٹر سیف اللہ نیازی کو حراست میں لیے جانے کی کی تصدیق کردی۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے رانا ثنااللہ نے ایک صحافی کی جانب سے پوچھے جانے پر کہ کیا ایف آئی اے نے سینیٹر سیف اللہ نیازی کو حراست میں لیا ہے جواب دیا کہ ایف آئی اے نے سینیٹر سیف اللہ نیازی کو متعدد بار بلایا لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔وزیر داخلہ نے کہا کہ اب ایف آئی اے انہیں اپنے ساتھ لے کر آئی ہے، اب ان سے کچھ سوالات اور انٹیروگیشن ہونی ہے، اگر انہوں نے ایف آئی اے سے تحقیقات میں تعاون نہ کیا تو پھر ضابطے کی کارروائی کے بعد قانون کے مطابق انہیں گرفتار کیا جاسکتا ہے۔ مین اسٹریم اور سوشل میڈیا پر چلنے والی خبروں کی تردید کرتے ہوئے وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ایف آئی اے نے کہا ہے کہ سینیٹر سیف اللہ نیازی کو تاحال ایف آئی اے کے کسی ونگ نے گرفتار نہیں کیا، ان کی سینٹ کے احاطے سےگرفتاری کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ترجمان ایف آئی اے نے کہا کہ الیکڑانک اور سوشل میڈیا میں گرفتاری کے حوالے سےچلنے والی خبروں کو سختی سے مسترد کرتے ہیں۔ واضح رہے کہ 13 ستمبر کو ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ نے سیف اللہ نیازی کے گھر پر چھاپہ مار کر ان کا لیپ ٹاپ، فون اور دیگر گیجٹس ضبط کر لیے تھے، میڈیا رپورٹس کے مطابق ایف آئی اے سمجھتی ہے کہ ویب سائٹ ’نامنظور ڈاٹ کام‘ ان کی رہائش گاہ سے آپریٹ کی جا رہی تھی۔اس چھاپے کے دو روز بعد سینیٹ اجلاس میں سیف اللہ نیازی نے معاملے پر اسلام آباد پولیس اور ایف آئی اے کے خلاف تحریک استحقاق جمع کرائی تھی۔انہوں نے کہا تھا ایف آئی اے کے ایک درجن افسران اور مسلح پولیس اہلکاروں نے ان پر حملہ کیا، ان کا موبائل فون اور لیپ ٹاپ ضبط کرلیا۔انہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ اہلکاروں نے ان کے گھر میں چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کیا اور میرے بیڈ روم میں بھی گھس گئے، انہوں نےمطالبہ کیا تھا کہ چیئرمین سینیٹ اس معاملے کا نوٹس لے کر قوانین کی سخت خلاف ورزی پر کارروائی کریں۔ دوسری جانب، لاہور ایف آئی اے نے فارن فنڈنگ کی تحقیات کے سلسلے میں مقدمہ درج کرکے پی ٹی آئی کے رہنما حامد زمان کو گرفتار کرلیا۔لاہور ایف آئی اے کی جانب سے فارن فنڈنگ کیس کا مقدمہ درج کرلیا گیا، ایف آئی آے ذرائع کے مطابق انصاف ٹرسٹ کے ٹرسٹی حامد زمان کو وارث روڈ سے گرفتار کرگیا ہے۔پی ٹی آئی رہنما پر الزام عائد کرتے ہوئے ایف آئی اے نے کہا ہے کہ بیرون ملک سے رقوم کی غیر قانونی منتقلی ہوئی، حامد خان پر الزام ہے کہ انہوں نے انصاف ٹرسٹ کے نام سے جعلی اکاؤنٹ کھول رکھا تھا جس میں 6 لاکھ 25 ہزار ڈالرز منتقل ہوئے۔ان ہی الزامات کی تحقیقات کے سلسلے میں ایف آئی اے نے حامد زمان کو گرفتار کر کے تحقیقات کا آغاز کردیا۔ یاد رہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس کا فیصلہ سنائے جانے کے بعد ایف آئی اے نے سابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصدر، سابق ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری، سابق گورنر سندھ عمران اسمٰعیل سمیت پارٹی کے متعدد سینئر رہنماؤں کو انکوائری میں شامل ہونے کے لیے طلب کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں