سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ قاتلانہ حملے میں جاں بحق

سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ محمد نور مسکان زئی خاران میں قاتلانہ حملے میں جاں بحق ہوگئے۔پولیس کے مطابق خاران میں سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ محمد نور مسکانزئی نامعلوم افراد کے حملے میں شدید زخمی ہوئے۔پولیس کا کہنا ہے کہ سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ کو شدید زخمی حالت میں خاران اسپتال منتقل کیا گیا، تاہم وہ زخموں ی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے۔ایس پی خاران آصف حلیم کا کہنا ہے کہ جسٹس (ر) محمد نور مسکانزئی کے پیٹ میں 4 گولیاں لگیں۔سابق چیف جسٹس محمد نور مسکانزئی اگست 2018ء میں بلوچستان ہائی کورٹ سے ریٹائر ہوئے تھے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے نامعلوم افراد کی فائرنگ سے سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ محمد نور مسکان زئی کی شہادت پر دلی دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔اپنے ایک تعزیتی بیان میں وزیراعلیٰ بلوچستان نے دہشت گردی کے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے اسے سابق چیف جسٹس کی شہادت کو بڑا سانحہ قرار دیا ہے اور دعا کی کہ اللہ تعالئ شہید کے درجات بلند فرمائے اور سوگوار خاندان کو صدمہ صبر و ہمت سے برداشت کرنے کا حوصلہ عطا کرے۔قائم مقام گورنر بلوچستان میر جان محمد خان جمالی نے خاران میں دہشت گردوں کی فائرنگ سے سابق چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ محمد نور مسکان زئی کے جاں بحق ہونے پر رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں