حکومت نےگھٹنےٹیک دیئے،کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے ساتھ مذاکرات

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے ساتھ مذاکرات کر رہے ہیں اور ان سے غیر مسلح ہونے کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم تحریک طالبان پاکستان کے کچھ گروپس کے ساتھ رابطے میں ہیں اور کالعدم ٹی ٹی پی کے کچھ گروپس حکومت سے بات کرنا چاہتے ہیں، ان کیساتھ مذاکرات میں افغان طالبان ثالث کا کردار ادا کر رہے ہیں۔وزیراعظم پاکستان عمران خان نے ترک ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ کالعدم ٹی ٹی پی کو غیر مسلح کرنے اور انہیں عام پاکستانی شہری بنانے کیلئے مذاکرات کر رہے ہیں، اگر کالعدم تحریک طالبان پاکستان ہتھیار ڈال د ے تو انہیں معاف کیا جا سکتا ہے، جس کے بعد کالعدم ٹی ٹی پی والے عام شہری کی طرح رہ سکتے ہیں۔وزیراعظم نے یہ بھی کہا کہ معلوم نہیں کالعدم ٹی ٹی پی کیساتھ مذاکرات نتیجہ خیز ہوں گے یا نہیں، مگر ان کیساتھ مذاکرات میں افغان طالبان ثالثی کر رہے ہیں، افغان طالبان اس حد تک کردار ادا کر نے میں مصروف ہیں کہ یہ مذاکرات افغانستان میں ہو رہے ہیں۔افغانستان کی صورت حال پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا ہمیشہ یہی کہا کہ افغانستان کے مسئلے کا فوجی حل نہیں ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں