جاپانی پھل ہم املوک کے فوائد

جاپانی پھل املوک جیسے انگلش میں پرسیمون کہا جاتا ہے پوٹاشیم، فاسفورس اور وٹامن سی کے حصول کا اچھا ذریعہ ہے۔ اس کی 2 اقسام ہیں، ایک ایشیائی اور دوسری امریکی۔ امریکا میں یہ پھل کاشت نہیں ہوتا بلکہ خودرو ہوتا ہے مگر جاپان میں اس کی ڈسپروس کاکی قسم کاشت ہوتی ہے جو پاکستان میں دستیاب ہے۔یہ پھل صحت کے لیے بہت فائدہ مند ہوتا ہے جس کے چند فوائد درج ذیل ہیں۔ اس پھل میں متعدد غذائی اجزا اور منرلز موجود ہوتے ہیں۔اس کی زیادہ تر اقسام میں بیٹا کیروٹین اور پوٹاشیم موجود ہوتا ہے جبکہ یہ فائبر، فاسفورس، کیلشیئم، وٹامن سی اور وٹامن اے کے حصول کا بھی اچھا ذریعہ ہے۔ جاپانی پھل میں وٹامن اے کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے اور یہ وٹامن آنکھوں کی صحت کے لیے اہم ہوتا ہے، کیونکہ یہ بینائی کے افعال کی معاونت کرتا ہے۔وٹامن اے تاریکی میں دیکھنے میں بھی مدد فراہم کرتا ہے جبکہ مدافعتی نظام کو بھی مضبوط کرتا ہے۔ اینٹی آکسائیڈنٹس کی مقدار اس پھل میں بہت زیادہ ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ غذا میں یہ بہترین اضافہ ثابت ہوسکتا ہے۔اینٹی آکسائیڈنٹس جسم میں زہریلے مواد سے پیدا ہونے والے تکسیدی تناؤ کا مقابلہ کرتے ہیں۔یہ تکسیدی تناؤ متعدد امراض جیسے کینسر، دل کی شریانوں کے امراض، ذیابیطس اور دماغی تنزلی کا خطرہ بڑھاتا ہے۔ ویسے تو جسم بھی کچھ اینٹی آکسائیڈنٹس تیار کرتا ہے مگر بیشتر کا حصول غذا سے ہی ممکن ہوتا ہے۔یہ پھل ورم کی روک تھام میں مدد فراہم کرتا ہے۔چوہوں پر ہونے والی ایک تحقیق میں دریافت کیا کہ اس پھل کی اینٹی آکسائیڈنٹ خصوصیات سے جسمانی ورم میں کمی آسکتی ہے جبکہ ٹشوز کی صحت بھی بہتر ہوتی ہے۔جاپانی پھل میں موجود وٹامن سی اس حوالے سے کردار ادا کرتا ہے۔یہ وٹامن متعدد امراض جیسے امراض قلب اور ذیابیطس کی شدت کو کم کرتا ہے۔اس پھل میں فائبر کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے اور یہ غذائی جز نظام ہاضمہ کے لیے بہت اہم ہوتا ہے۔فائبر کے استعمال سے قبض کا خطرہ کم ہوتا ہے جبکہ اس پھل میں موجود فائبر جسم کے لیے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح بھی کم کرتا ہے۔ ا100 گرام پھل میں 70 کیلوریز، 18.59 گرام کاربوہائیڈریٹس، 0.58 گرام پروٹین، 0.19 گرام چکنائی، 3.6 گرام فائبر، 81 مائیکرو گرام وٹامن اے، 7.5 ملی گرام وٹامن سی، 253 مائیکرو گرام بیٹا کیروٹین، 161 ملی گرام پوٹاشیم، 17 ملی گرام فاسفورس، 8 ملی گرام کیلشیئم، ایک ملی گرام سوڈیم اور 150 مائیکرو گرام آئرن موجود ہوتے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں