تیز چہل قدمی عمر بڑھنےکےاثرات کی روک تھام میں مددگار

تیز چہل قدمی حیاتیاتی عمر کو کم کر نے میں مدد فراہم کرتی ہے- برطانوی کی تحقیق کے مطابق چلنے کی رفتار صحت کا مضبوط عندیہ ہوتی ہے، مگر اس نئی تحقیق میں ہم نے لوگوں کی جینیاتی تفصیلات کو استعمال کرکے ثابت کیا کہ تیز رفتاری سے چہل قدمی حیاتیاتی عمر کو کم کرنے میں مدد فراہم کرتی ہے۔برطانیہ کی لیسٹرشائر یونیورسٹی کی اس تحقیق میں بتایا گیا کہ درمیانی عمر کے 4 لاکھ 5 ہزار سے زیادہ افراد کے ڈیٹا کی جانچ پڑتال کی تھی۔ان افراد کے جینیاتی تجزیے سے تیز رفتاری سے چہل قدمی اور حیاتیاتی عمر کے درمیان ایک تعلق کا عندیہ ملا۔تحقیق میں بتایا گیا کہ سست روی سے چلنے سے یہ مثبت اثر دیکھنے میں نہیں آتا مگر یہ ذہن میں رہے کہ ہر طرح کی حرکت صحت کے لیے مفید ہی ہوتی ہے۔محققین نے بتایا کہ نتائج سے عندیہ ملتا ہے کہ آہستگی سے چلنے کے عادی لوگوں میں دائمی امراض یا غیر صحت مند بڑھاپے کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے اور اس کے مقابلے میں تیزرفتاری سے چلنا مثبت اثرات مرتب کرتا ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں