بلاول بھٹو زرداری نے وفاقی وزیر کےعہدے کا حلف اٹھا لیا

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وفاقی وزیر کے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔ تقریب حلف برداری ایوان صدر میں منعقد ہوئی جہاں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے ان سے عہدے کا حلف لیا جبکہ اس موقع پر وزیر اعظم شہباز شریف بھی موجود تھے۔حلف برداری کے بعد وزیر اعظم نے بلاول بھٹو سے مصافحہ کیا اور انہیں گلے بھی لگایا۔حلف برداری کے بعد صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے بھٹو زرداری نے وفاقی وزیر کی حیثیت سے ایوان صدر میں ملاقات کی۔بلاول بھٹو زرداری 2018 میں ہونے والے عام انتخاب میں کامیابی کی بدولت دوسری مرتبہ رکن اسمبلی منتخب ہوئے تھے، البتہ وہ اب پہلی مرتبہ کابینہ کا حصہ بنے ہیں۔گزشتہ روز پیپلز پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی (سی ای سی) کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول نے کہا تھا کہ پارٹی نے اپنی ذمے داریاں اٹھانے کا خود فیصلہ کیا ہے اور کل میں وفاقی وزیر کے عہدے کا حلف اٹھاؤں کا اور بذات خود اتحادی حکومت کا حصہ بنوں گا۔بلاول نے یہ واضح تو نہیں کیا تھا کہ وہ کس وزارت کا قلمدان سنبھالیں گے لیکن جب ان سے صحافی نے سوال کیا تھا کہ وہ خارجہ پالیسی پر تبصرہ کریں تو انہوں نے کہا تھا کہ وہ اس معاملے پر الگ سے پریس کانفرنس کریں گے۔ انہوں نے شہباز شریف کی کابینہ کا حصہ بننے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا تھا کہ یکطرفہ فیصلہ سازی ممکن نہیں اور ملک کے مسائل کا حل نکالنا تمام سیاسی جماعتوں کی اجتماعی ذمہ داری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک بڑا چیلنج ہے اور ہر کسی کو کردار ادا کرتے ہوئے کچھ بوجھ اٹھانا چاہیے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ ٹیم کا حصہ ہونے کے ناطے کبھی پیپلز پارٹی کی ترجیحات کو اہمیت دی جائے گی اور کبھی دوسری سیاسی جماعتوں کی ترجیحات کو سامنے رکھا جائے گا تاکہ مل کر حل تلاش کیا جاسکے۔ ان کا کہنا تھا کہ جمہوریت کی خوبصورتی یہ ہے کہ ایک غیر جمہوری شخص کو ہم نے گھر بھیج دیا اور یہ ایک سیاسی معجزہ اور ایک تاریخی سیاسی کامیابی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں