اے این پی امیدوارکےقتل کاالزام،بیوی سمیت3 افرادگرفتار

پولیس نے ڈیرہ اسمٰعیل خان شہر کے میئر کے عہدے کے لیے عوامی نیشنل پارٹی کے امیدوار عمر خطاب شیرانی کے قتل کے الزام میں ان کی بیوی سمیت 3 افراد کو گرفتار کیا ہے۔ عمر خطاب شیرانی کو 19 دسمبر کو ہونے والے بلدیاتی حکومت کے انتخابات سے ایک روز قبل فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا تھا۔گرفتار کی گئی خاتون مقتول شخص کی تیسری بیوی بتائی گئی ہیں۔اس ضمن میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی پولیس افسر (ڈی پی او) نجم الحسنین لیاقت نے کہا کہ ابتدائی تفتیش کے دوران مقتول کی تیسری اہلیہ نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے عبدالحکیم اور شفیق افغانی نامی افراد کو اپنے شوہر کے قتل کا ذمہ دیا تھا۔ڈی پی او کے مطابق خاتون نے پولیس کو بتایا کہ اس کے عبدالحکیم سےتعلقات تھے اور وہ اس سے شادی کرنا چاہتی تھی۔نجم الحسنین لیاقت نے بتایا کہ گرفتار کیے گئے دیگر دو افراد نے بھی اپنے جرم کا اعتراف کرلیا ہے۔خیال رہے کہ پولیس نے بتایا تھا کہ عمر خطاب شیرانی پر ماڈل ٹاؤن تھانے کی حدود میں ان کی رہائش گاہ کے باہر نامعلوم حملہ آوروں نےفائرنگ کی اور وہ موقع پر دم توڑ گئے۔عمر خطاب شیرانی کے قتل کےواقعے کے فوری بعد ان کے رشتہ دار اور اے این پی کے کارکنان کی بڑی تعداد ان کے گھر کے باہر جمع ہوگئے تھی اور قتل کےخلاف احتجاج کیا تھا۔بعد ازاں نے میت کےساتھ ساؤتھ سرکیولر روڈ پر احتجاج کیا اور کئی گھنٹوں پر ٹریفک معطل ہوگئی تھی تاہم مقامی انتظامیہ کے ساتھ مذاکرات کے بعد احتجاج ختم کردیا گیا تھا۔اس کے علاوہ الیکشن کمیشن (ای سی پی) نے اے این پی کے میئر کے امیدوار کےقتل کےواقعے کےبعد ڈیرہ اسمٰعیل خان میئر کے لیے شیڈول انتخاب ملتوی کردیا تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں