اپنےدورحکومت میں قانون کی حکمرانی کانفاذنہ کرسکا،عمران خان

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نےاپنی ناکامی کا اعتراف کیا کہ وہ اپنے دور حکومت میں قانون کی حکمرانی کا نفاذ نہیں کرسکے تھے – غیرملکی ٹی وی چینل کو دیے گئے انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ ڈاکٹرز نے 6 ہفتوں کے آرام کا مشورہ دیا ہے اور صحتیابی میں 4 ہفتے لگ سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی مقبولیت کی وجہ سے موجودہ حکومت نے سب سے زیادہ دھمکیاں دیں، موجود حکومت مجھے ہٹانا چاہتی تھی اور مجھے سازش کے تحت ہٹایا، ان کا مقصد مجھے راستے سے ہٹانا ہے۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھاکہ میں اپنے خلاف سازش کے بارے میں جانتا ہوں، یہ سب دو ماہ پہلے شروع کیا گیا جب کہ مذہب کی بنیاد میں مجھے قتل کرنے کی سازش بنائی گئی۔انہوں نے مزید کہا کہ مجھے یقین ہے آئندہ الیکشن میری جماعت جیتے گی، حکومت کےخلاف مارچ آئین کے مطابق ہے اور یہ ہمارا حق ہے۔چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ میری حکومت آئینی طریقے سے نہیں ہٹائی گئی، میری حکومت الیکشن نہیں آکشن کے ذریعے ہٹائی گئی جو غیرآئینی تھا، افسوس ہے اپنے دور حکومت میں قانون کی حکمرانی کا نفاذ نہ کرسکا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں