الیکٹرک چوپ اسٹکس جو کھانےکوبغیرنمک کےنمکین بنائے

جاپان میں سائنسدانوں نے ایک ایسی چوپ اسٹکس ایجاد کی ہے جو کھانے میں نمک کو شامل کرنے کی ضرورت کو ہی ختم کردے گی۔اس کا مقصد جاپان کے مقبول ترین پکوانوں میں نمک کی مقدار کو کم رکھنا ہے۔یہ چوپ اسٹکس الیکٹرک سمولیشن اور ایک منی کمپیوٹر ویئر ایبل پر کام کرتی ہے جو کھانے والے کی کلائی پر بندھا ہوتا ہے۔یہ ڈیوائس سوڈیم ائیون ٹرانسمٹ کرتی ہے اور چوپ اسٹکس سے منہ میں نمکین ہونے کا احساس دلاتی ہے۔ٹوکیو کی میجی یونیورسٹی نے اس انوکھی ایجاد کو تیار کیا ہے اور محققین کا کہنا ہے کہ فی الحال یہ پروٹوٹائپ ماڈل ہے مگر توقع ہے کہ اگلے سال صارفین کو یہ چوپ اسٹکس دستیاب ہوں گی۔چین اور جاپان میں چوپ اسٹکس کا استعمال بہت عام ہوتا ہے بالخصوص جاپان کے روایتی پکوانوں میں نمک کا بہت زیادہ استعمال ہوتا ہے۔ایک اندازے کے مطابق جاپان میں ایک بالغ فرد اوسطاً روزانہ 10 گرام نمک استعمال کرتا ہے جو کہ عالمی ادارہ صحت کی تجویز کردہ مقدار سے دگنا زیادہ ہے۔محققین نے بتایا کہ ان کی تیار کردہ چوپ اسٹکس بہت کم بجلی کو استعمال کرتی ہے جو انسانی جسم پر اثرانداز نہیں ہوتی، مگر اس سے لوگوں میں کھانے کے ذائقے کے احساس کو بدلنے میں مدد ملتی ہے۔انہوں نے بتایا کہ لوگوں میں ٹرائلز کے دوران تصدیق ہوئی تھی کہ یہ ڈیوائس کم نمک والے کھانوں کا ذائقہ زیادہ نمکین محسوس کراتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں