اسلام آبادمیں15 سے18 سال کےطلباء کیلئےکرونا ویکسینیشن لازمی قرار

اسلام آباد میں 15 سے 18 سال کے طلباء کیلئے کرونا ویکسینیشن لازمی قرار دے دی گئی ہے۔محکمہ صحت نے بتایا ہے کہ این سی او سی کی ہدایات کے مطابق 15 سے 18 سال کے طلباء کو فائزر ویکسین لگائی جائے گی۔ اس سلسلے میں ضلعی محکمہ صحت کی جانب سے موبائل ویکسینیشنز ٹیمیں تعلیمی اداروں میں بھیجی جائیں گی۔ فیڈرل ڈائریکٹوریٹ، فیرا اور تمام نجی تعلیمی ادارے، ضلعی محکمہ صحت کی ویکسینیشن کے عمل میں معاونت کریں گے۔محکمہ صحت کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ وفاق میں مجسٹریٹ اور اسسٹنٹ کمشنرز کرونا ویکسینیشن کے عمل کی نگرانی کریں گے اوراسلام آباد میں 100 فیصد انسداد کرونا ویکسینیشن کو یقینی بنایا جائے گا۔واضح رہے کہ غیرملکی خبر رساں ادارے ’’اے ایف پی‘‘ نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ امریکی فارماسیوٹیکل کمپنی فائزر اور اس کی جرمن پارٹنر نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ 5 سے 11 برس کی عمر کے بچوں کیلئے ویکسین محفوظ ہے اور اینٹی باڈی کے مضبوط ردعمل کو ظاہر کرتی ہے اور وہ یورپی یونین، امریکا اور پوری دنیا کے ریگولیٹری اداروں کو ’جلد از جلد‘ اپنا ڈیٹا جمع کروانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔رپورٹ کے مطابق 12 سال سے کم عمر کے بچوں کیلئے یہ اپنی نوعیت کے پہلے آزمائشی نتائج ہیں جبکہ 6 سے 11 سال کے بچوں کیلئے موڈرنا ٹرائل ابھی جاری ہیں۔واضح رہے کہ فائزر اور موڈرنا دونوں ویکیسنز پہلے ہی 12 سال سے زائد عمر کے نوجوانوں اور دنیا بھر کے ممالک میں بالغ افراد کو دی جارہی ہیںا

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں