اسرائیل میں 1200 سال قدیم مسجد کے آثار دریافت

اسرائیلی ماہرین آثار قدیمہ نے ملک کے جنوب میں1200 سالہ ایک قدیم مسجد کے آثار دریافت کیے ہیں اسرائیل کے آثار قدیمہ کی اتھارٹی (آئی اے اے) نے ایک بیان میں کہا کہ اندازاً 1200 سال قدیم مسجد کی باقیات راحت شہر میں ایک نئے محلے کی تعمیر کے کام کے دوران دریافت ہوئی۔آئی اے اے نے کہا کہ صحرائے نیگیو میں واقع مسجد کی باقیات میں ایک کمرہ اور مکہ کی سمت ایک دیوار ہے جس کے ساتھ ایک آدھا گہرا دائرہ بھی واضح ہے جس کا رخ جنوب کی جانب ہے۔ آئی اے اے نے کہا ’یہ منفرد تعمیراتی خصوصیات ظاہر کرتی ہیں کہ یہ عمارت ایک مسجد کے طور پر استعمال ہوتی تھی جہاں بیک وقت چند درجن نمازی عبادت کر سکتے تھے‘۔ آئی اے اے نے کہا کہ مسجد سے تھوڑے فاصلے پر ایک پرتعیش سرکاری عمارت بھی دریافت ہوئی جس میں دسترخوان اور شیشے کے نوادرات کی باقیات یہاں کے رہائشیوں کی امارت ظاہر کرتی ہیں۔ 3 سال قبل اتھارٹی نے ساتویں سے آٹھویں صدی عیسوی میں لگ بھگ اسی دور کی ایک اور مسجد کا پتہ لگایا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں