اسرائیلی وزیراعظم متحدہ عرب امارات پہنچ گئے،ولی عہد سےملاقات

اسرائیلی وزیراعظم نفتالی بینیٹ نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے ولی عہد سے ابوظبی میں ملاقات کی ہے ولی عہد شیخ محمد بن زاید النہیان نے اپنے ذاتی محل میں اسرائیلی وزیر اعظم کا استقبال کیا اور بات چیت کے لیے اندر جانے سے قبل خیر مقدمی جملوں کا تبادلہ کیا۔یہ دورہ ’ابراہم معاہدے‘ کے نام سے مشہور امریکی ثالثی میں ہونے والی سلسلہ وار بات چیت کے تحت متحدہ عرب امارات کی جانب سے کئی دہائیوں پر محیط عرب اتفاق رائے اور سفارتی تعلقات کو توڑنے کے 15 ماہ بعد ہوا ہے۔اسرائیلی وزیر اعظم اتوار کے روز یو اے ای پہنچے تھے اور امکان ہے کہ وہ تجارتی روابط پر اپنی توجہ مرکوز رکھیں گے، ان کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ان کا دورہ مشرق وسطیٰ کے لیے ’نئی حقیقت‘ کا عکاس ہے۔یو اے ای کے سرکاری خبر رساں ادارے ’وام‘ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’میری رائے میں یہ نئی حقیقت ہے جس کا یہ خطہ مشاہدہ کر رہا ہے اور ہم اپنے بچوں کا بہتر مستقبل یقینی بنانے کے لیے مل کر کام کر رہے ہیں‘۔ یاد رہے کہ گزشتہ برس متحدہ عرب امارات، مصر اور اردن کے بعد اسرائیل کے ساتھ مکمل سفارتی روابط قائم کرنے والا تیسرا عرب ملک بنا تھا جس کے بعد بحرین اور مراکش نے بھی اس کی پیروی کی تھی۔علاوہ ازیں ابراہم معاہدے کے تحت سوڈان نے بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے پر اتفاق کیا تھا لیکن مکمل رابط اب تک عملی شکل میں نہیں آئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں