آسکر ایوارڈ یافتہ فلمساز پال ہیگس جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار

آسکر ایوارڈ یافتہ فلم ڈائریکٹر اور اسکرین رائٹر پال ہیگس کو اٹلی میں جنسی زیادتی کے الزام کے تحت گرفتار کرلیا گیا۔کینیڈین اسکرین رائٹر کے اطالوی وکیل مشیل لافورجیا نے بتایا کہ پال ہیگس نے ان الزامات کی تردید کی ہے۔انہوں نے کہا کہ پال ہیگس کو اتوار کو برنڈیسی پراسیکیوٹرز کی جانب سے جاری کیے گئے ہنگامی احکامات کے تحت حراست میں لیا گیا اور وہ اب اٹلی کے شہر اوستونی میں گھر میں نظر بند ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ ’جمعرات تک ان سے ایک جج پوچھ گچھ کریں گے جنہیں یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ ان کی گرفتاری کی توثیق کی جائے یا نہیں‘۔ اٹلی کے شہر برنڈیسی میں سرکاری وکیل نے ایک بیان میں کہا کہ پال ہیگس پر اوستونی میں 2 روز تک ایک خاتون کو جنسی تعلقات پر مجبور کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ پال ہیگس کی ذاتی وکیل پریا چوہدری نے ایک بیان میں کہا ’اطالوی قانون کے تحت میں شواہد پر بات نہیں کر سکتی، مجھے یقین ہے کہ پال ہیگس کے خلاف تمام الزامات مسترد ہوجائیں گے‘۔ دونوں وکلا نے بتایا کہ پال ہیگس نے بے قصور ہونے اور حکام کے ساتھ تعاون کرنے کی یقین دہانی کروائی ہے۔ استغاثہ نے بیان میں کہا کہ ’ایک نوجوان غیر ملکی خاتون کو جنسی تعلقات کے بعد طبی امداد لینے پر مجبور کیا گیا‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں